Office denied the departure of ASEA BB abroad 131

دفترخارجہ نے آسیہ بی بی کی بیرون ملک روانگی کی تردید کردی

ترجمان دفترخارجہ ڈاکٹرمحمد فیصل کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ آسیہ بی بی پاکستان میں موجود ہے، اس کی بیرون ملک روانگی کی خبرمیں کوئی صداقت نہیں۔

سپریم کورٹ نے آسیہ بی بی کو 31 اکتوبرکو شک کا فائدہ دیتے ہوئے بری کیا تھا تاہم اس کی رہائی گزشتہ روز عمل میں آئی، جس کی تصدیق اس کے وکیل سیف الملوک ایڈووکیٹ نے کی ہے۔

آسیہ بی بی کی ملتان جیل سے رہائی کے بعد یہ خبریں بھی زیرگردش ہیں کہ اسے نورخان ایئربیس راولپنڈی سے خصوصی طیارے کے ذریعے ہالینڈ روانہ کردیا گیا ہے، آسیہ بی بی کے ہمراہ اس کے گھر والوں کے علاوہ پاکستان میں ہالینڈ کے سفیر بھی تھے۔

آسیہ بی بی کی رہائی پرتحریک لبیک پاکستان نے ردعمل میں کہا ہے کہ آسیہ بی بی کی رہائی حکومت سے کئے گئے معاہدے کی خلاف ورزی ہے، اس طرح بدعہدی کی سیاہ تاریخ رقم کی گئی ہے۔

واضح رہے آسیہ بی بی کو توہین رسالت کے الزام میں 2010 میں لاہور کی ماتحت عدالت نے سزائے موت سنائی تھی، لاہور ہائی کورٹ نے بھی آسیہ بی بی کی سزائے موت کے خلاف اپیل خارج کر دی تھی جس کے بعد ملزمہ نے عدالت عظمیٰ میں درخواست دائر کی تھی۔ گزشتہ ماہ 31 اکتوبرکو سپریم کورٹ نے سزا کالعدم قراردے کرآسیہ بی بی کورہا کرنے کا حکم جاری کیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں